اردو کی برقی کتابیں

صفحہ اولکتاب کا نمونہ پڑھیں


ٹانکے دل کے زخموں کے

حیدر قریشی

مجموعے ”دعائے دل“ کی غزلیں

ڈاؤن لوڈ کریں 

   ورڈ فائل                                                                          ٹیکسٹ فائل

غزلیں



یہ آنکھ کے آنسو ہیں کہ ساون کی جھڑی ہے

قابو میں نہیں دل کہ حضوری کی گھڑی ہے


ہم نے ترے غم میں کوئی مالا نہیں پہنی

سینہ ہی دَمکتے ہوئے زخموں کی لڑی ہے


خاطر میں مگر پھر بھی کہاں لائے کبھی ہم

کب اہلِ ملامت پہ نہ اُفتاد پڑی ہے


موت آئی ہوئی ہے مجھے لینے کے لئے اور

یہ زندگی پاس اپنے ہی رکھنے پہ اَڑی ہے


ہے زندگی و موت میں اک معرکہ برپا

جیتے کوئی، ہم پر یہی اک رات کڑی ہے


٭٭٭


جو دل میں کشمکشِ نیک اور بد نہ رہے

لہو کی لہروں میں پھر کوئی جزر و مد نہ رہے


یہی تذبذب و تشکیک اب سند ٹھہرے

سند سمجھتے تھے جن کو وہ مستند نہ رہے


خدایا اِن پہ بھی اتنی عنایتیں کر دے

کہ حاسدوں کے دلوں میں کہیں حسد نہ رہے


جب اعتماد نہیں ہے تو دوستی کیسی

وہ دشمنی بھی نہیں ہے کہ جو اشد نہ رہے


سپردگی بھی محبت کا ایک رنگ سہی

مزہ ہی کیا رہا جب اس میں رد و کد نہ رہے


ہماری عمر کی یہ آخری محبت ہے

سو اب کے بار محبت کی کوئی حد نہ رہے


یہ بال و پر تو چلو آ گئے نئے حیدر

بلا سے پہلے سے اپنے وہ خال و خد نہ رہے

٭٭٭

ڈاؤن لوڈ کریں 

   ورڈ فائل                                                                          ٹیکسٹ فائل

پڑھنے میں مشکل؟؟؟

یہاں تشریف لائیں۔ اب صفحات کا طے شدہ فانٹ۔

   انسٹال کرنے کی امداد اور برقی کتابوں میں استعمال شدہ فانٹس کی معلومات یہاں ہے۔

صفحہ اول