اردو کی برقی کتابیں

صفحہ اول کتاب کا نمونہ پڑھیں


سخن ملتوی

رؤف خیر

ڈاؤن لوڈ کریں 

   ورڈ فائل                                                          ٹیکسٹ فائل

غزلیں


سحر حسین تو شب دلربا بھی ہوتی تھی

نماز فجر ہماری قضا بھی ہوتی تھی


یہ مانتے  ہیں  کہ ہم سے  خطا بھی ہوتی تھی

کبھی کبھی تو سزا ناروا بھی ہوتی تھی


وہی تو آج دکھائی کہیں  نہیں  دیتے  

وہ لوگ جن سے  سلام و دعا بھی ہوتی تھی


سمجھنے  لگتا وہ دنیا کو ملکیت اپنی

جو ہم کلام کسی سے  ذرا بھی ہوتی تھی


الٹ کے  رکھ دیا تختہ فساد نے  کیا کیا

سنا تو تھا کہ کبھی یہ وبا بھی ہوتی تھی


کھٹکتی رہتی تھی وجدان خیرؔ میں  پہروں  

اگر سخن میں  خرابی ذرا بھی ہوتی تھی

***



میں  اپنے  ساتھ ہوں  اب التفات مت کرنا

خدا کے  واسطے  کچھ دیر بات مت کرنا


یہ مشورہ بھی ہے  توہینِ ذات مت کرنا

قبول اپنے  لیے  کوئی مات مت کرنا


قلم کے  ساتھ قلم کی روایتیں بھی گئیں  

جو بے  قلم ہیں  قلم ان کے  ہاتھ مت کرنا


ہے  خاکسار تو سر پہ اسے  بٹھا لینا

شریک زمرۂ لات و منات مت کرنا


نکال پھینگا ہے  فہرست سے  اسے  میں  نے  

اب آگے  میرے  کبھی اس کی بات مت کرنا


پرندو !  لوٹو سر شام آشیانوں  کو

خراب ہیں  ابھی حالات رات مت کرنا


یہ کائنات تو شایانِ شان ہی کب ہے  

تلاش چشمۂ آبِ حیات مت کرنا


ہمیں  سبیل کا غم ہے  نہ خیرؔ پیاس کا ہے  

ہمارے  ساتھ کبھی کوئی گھات مت کرنا

***

٭٭٭٭٭٭٭٭٭٭

ڈاؤن لوڈ کریں 

   ورڈ فائل                                                          ٹیکسٹ فائل

پڑھنے میں مشکل؟؟؟

یہاں تشریف لائیں۔ اب صفحات کا طے شدہ فانٹ۔

   انسٹال کرنے کی امداد اور برقی کتابوں میں استعمال شدہ فانٹس کی معلومات یہاں ہے۔

صفحہ اول