اردو کی برقی کتابیں

صفحہ اولکتاب کا نمونہ پڑھیں


نگاہ

جلیل سازؔ


ڈاؤن لوڈ کریں 

   ورڈ فائل                                                                          ٹیکسٹ فائل

غزلیں

تیری قربت سے ہوا لالہ جبیں موسم گل
اس سے پہلے تو نہ تھا اتنا حسیں موسم گل
کہیں ہوتا ہے دھنک رنگ سا منظر منظر
دھار لیتا ہے ترا روپ کہیں موسم گل
تجھ میں خوشبو بھی ہے رنگت بھی ہے رعنائی بھی
تجھ سے بڑھ آ کر کوئی محبوب نہیں موسم گل
ایک دھندلا سا گماں ایک اچٹتا سا خیال
میرے حصے میں نہیں حسنِ یقیں موسم گل
اس تعلق کو میں کس نام سے منسوب آ کروں
تو مرے دل کے قریں، تیرے قریں موسم گل
وہ کسی پیآ کرِ پُر حسن کا پرتو تو نہیں
سازؔ کہتے ہیں جسے اہلِ زمیں موسمِ گل

****


 اشک اب آنکھوں کو تر رکھتا نہیں
کیسا دریا ہے، گہر رکھتا نہیں
دوسروں کی جستجو شام و سحر
آدمی خود کی خبر رکھتا نہیں
ہیں جہانگیری کی خواہش میں سبھی
اب کوئی نیزے پہ سر رکھتا نہیں
جو ہلا دیتا تھا زنجیرِ فلک
اب وہی نالہ اثر رکھتا نہیں
آج کی آسائشوں میں مست ہوں
کل کی آ کروٹ پر نظر رکھتا نہیں
اپنے منصوبوں کا بنیادی قدم
عقل کے معیار پر رکھتا نہیں
سازؔ ادھورا رہ گیا ہے آدمی
علم رکھتا ہے ہنر رکھتا نہیں
***

چھوٹے نیتاؤں سے رشتہ نہیں رکھا میں نے
شہر ہوں، گاؤں سے رشتہ نہیں رکھا میں نے
دھوپ کو اوڑھ کے چلنا مری فطرت ٹھہری
وقت کی چھاؤں سے رشتہ نہیں رکھا میں نے
یوں بھی میں ظلِ الٰہی کا مصاحب نہ رہا
اور آقاؤں سے رشتہ نہیں رکھا میں نے
میں نے پرواز کا شاہیں سے سلیقہ سیکھا
دوستو! پاؤں سے رشتہ نہیں رکھا میں نے
وہ جو کمزور ہے، بے بس ہے، مرا ساتھی ہے
سازؔ زردار سے رشتہ نہیں رکھا میں نے

***

ڈاؤن لوڈ کریں 

ورڈ فائل                                                                          ٹیکسٹ فائل

پڑھنے میں مشکل؟؟؟

یہاں تشریف لائیں۔ اب صفحات کا طے شدہ فانٹ۔

   انسٹال کرنے کی امداد اور برقی کتابوں میں استعمال شدہ فانٹس کی معلومات یہاں ہے۔

صفحہ اول